162

سیز فائر لائن پر بھارتی فوج کی بلا اشتعال فائرنگ سے دو کشمیری ہلاک

مظفرآباد (کشمیریت) سیز فائر لائن پر آئے روز دو طرفہ فائرنگ کا سلسلہ جاری رہتا ہے جس سے اکثر دونوں اطراف میں جانی و مالی نقصان ہوتا ہے۔ بدھ کے روز پاکستانی زیر انتظام وادی نیلم اور وادی لیپا میں دونوں اطراف سے سیز فائر لائن کی خلاف ورزی کی گئی۔ دوپہر دو بجے بھارتی افواج کی جانب سے یکدم فائرنگ کا سلسلہ شروع ہو گیا۔

ابتدائی اطلاعات کے مطابق فائرنگ سے پاکستانی زیر انتظام کشمیر کے وادی نیلم میں دو شہری ہلاک ہو گئے جن میں ایک خاتون بھی شامل ہیں۔ ہلاک ہونے والے نعمان ولد مطیع اللہ کا تعلق شاردہ جبکہ بسمہ بی بی ولد غلام مرتضی کا تعلق کٹھہ چوگلی سے تھا جو وادی نیلم کے دو گاؤں ہیں۔

پاکستانی زیر انتظام کشمیر کے مختلف علاقوں سے موصول ہونے والی نقصآنات کی تصاویر

اطلاعات کے مطابق سیز فائر لائن پر فائرنگ سے آٹھ شہری بھی زخمی ہوئے جن میں سے دو کی حالت تشویشناک بتائی جا رہی ہے۔ فائرنگ سے 13 مکانات و دوکانوں کو بھی کلی یا جزوی نقصان پہنچا ہے۔ فائرنگ شروع ہوتے ہی کاروبار زندگی معطل ہو گیا اور مقامی بازار بند ہو گئے جس کی وجہ سے لوگ گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے

پاکستانی زیر انتظام وادی نیلم سیاحت کے حوالے سے بھی اپنا کوئی ثانی نہیں رکھتی ہے فائرنگ کی وجہ سے پاکستان اور بیرون ممالک سے آئے سیاح بھی وادی مین مقید ہو گئے جن کو متعلقہ اداروں نے محفوظ مقامات تک پہنچانے کا بندوبست کیا۔

تارزہ ترین اطلاعات کے مطابق شام گئے تک ٹیٹوال اور گریس سیکٹر میں بھاری ہتھیاروں سے فائرنگ کا سلسلہ جاری تھا