168

اسدالدین اویسی سمیت 22 مسلم امیدوار کامیاب

کشمیریت: بھارت میں حالیہ ہونے والے انتخابات کے ووٹوں کی گنتی گزشتہ روز کی گئی۔ بھارتی ٹی وی اور الیکشن کمیشن کے مطابق انتہائی دائیں بازوں کی سیاسی جماعت بھارتی جنتا پارٹی زیادہ نشستیں حاصل کرنے میں کامیاب ہوئی ہے۔ عام انتخابات میں 543 میں سے 542 نشستوں پر الیکشن ہوئے ہیں جن میں بی جے پی اور اس کی حمایتی جماعتوں نے 350 کے لگ بھگ نشستیں حاصل کی ہیں۔ تاہم یہ اعداد شمار غیر سرکاری ہیں۔

بھارت میں عام انتخابات میں حکومت بنانے کے لیے ایک تہائی یعنی 272 نشستیں درکار ہوتی ہیں جبکہ یہ واضع ہو چکا ہے کہ بھارتی جنتا پارٹی مرکز میں ایک طاقتور حکومت بنانے میں کامیاب ہو جائے گی۔

بھارت میں مسلمانوں کے حوالے سے بھارتی جنتا پارٹی کا رویہ گزشتہ پانچ سالوں میں زیادہ اچھا نہیں رہا ہے۔ اس دوران ایک طرف کشمیر میں مسلسل حالت جنگ رہی ہے اور دوسری طرف ہندوستان بھر میں مسلمانوں اور اقلیتی قوموں کے ساتھ ناروا سلوک اور گائے زبح کرنے کے معاملے پر بہت سارے افراد کو قتل کیا ہے۔

بھارتی ریاست حیدر آباد مسلم اکثریتی ریاست ہے جس میں اسد الدین اویسی ایک طاقتور مسلم رہنما کے طور پر جانے جاتے ہیں۔ حالیہ انتخابات میں جہاں اسد الدین اویسی نے اپنی نشست جیتی ہے وہیں دیگر بائیس مسلم امیدوار بھی کامیاب قرار پائے ہیں۔ واضع رہے کہ گزشتہ انتخابات کی طرح اس بار مسلمانوں کو زیادہ اہمیت نہیں دی گئی ہے۔ ذیل میں کامیاب ہونے والے مسلم امیدواروں کے نام دیے گئے ہیں

اسدالدین اویسی(تلنگانہ حیدرآباد )
اعظم خان(یوپی ،رامپور)
ڈاکٹر شفیق الرحمن برق(یوپی ،سنبھل)
مولانا بدرالدین اجمل، کنوردانش علی، 
امتیازجلیل(مہاراشٹر،اورنگ آباد)
کنور دانش علی (یوپی ،امروہہ )
ایس ٹی حسن(یوپی ،مراد آباد ) 
افضال انصاری(یوپی ،غازی پورس)
فضل الرحمن (سہارنپور، یوپی )
چودھری محبوب علی قیصر(بہار)
ڈاکٹرمحمد جاوید(بہار، کشن گنج)
فاروق عبداللہ(جموں کشمیر) 
حسنین مسعودی(جموں کشمیر)
محمد اکبرلون(جموں کشمیر)
اے ایم عارف (کیرالا )
ای ٹی محمد بشیر(محمد بشیر)
محمد صادق (پنجاب )
محمد فیضل(لکشدیپ)
نصرت جہاں (مغربی بنگال)
خلیل الرحمن (مغربی بنگال)
ابوطاہرخان (مغربی بنگال)
ساجدہ احمد (مغربی بنگال)