147

لندن: مشتعل مظاہرین نے بیرسٹر سلطان چوہدری کے کپڑے پھاڑ دیے

لندن میں کشمیریوں کی جانب سے بھارتی ہائی کمیشن کے سامنے کیے گئے احتجاج کے دوران آزاد کشمیر کے سیاسی رہنما بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کو عوامی ردعمل کا سامنا کرنا پڑا ، احتجاجی مظاہرے میں موجود ناراض لوگوں نے انہیں وہاں سے چلے جانے پر مجبور کیا۔

بیرسٹر سلطان محمود چوہدری آج کل پاکستان تحریک انصاف کی آزاد کشمیر میں قائم شاخ سے وابستہ ہیں۔

بیرسٹر سلطان کی مظاہرے میں شرکت کی تصاویر بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہیں لیکن انہیں مظاہر ے کے دوران ناخوشگوار صورتحال کا سامنا کرنا پڑا۔

مظاہرے میں جہاں ان کے حمایتی موجود تھے وہیں ان کے سیاسی مخالفین کی بھی بڑی تعداد تھی۔ بیرسٹر سلطان نے جب تقریر کرنے کی کوشش کی تو بھی ان پر آوازے کسے جاتے رہے اور ہوٹنگ ہوتی رہی۔

عینی شاہد صحافیوں کا مشاہدہ :

مظاہرے میں موجود صحافیوں کے بقول پہلے وہاں آزادکشمیر کی اسمبلی کے اسپیکر شاہ غلام قادر نے تقریر کی کوشش کی ، ابھی وہ تقریر کر ہی رہے تھے کہ بیرسٹر سلطان اور چوہدری یاسین وہاں پہنچ گئے ، شاہ غلام قادر سے مائیک چھینے کی کوشش ہوئی ، اس دھکا مکی میں مائیک شاہ غلام قادر کے چہرے پر بھی لگا ۔

مظاہرے میں شریک سلطان محمود چوہدری کی وائرل ویڈیو، جس میں لوگ نعرے لگا رہے ہیں

بیرسٹر سلطان کو جب اسٹیج پر چڑھانے کی کوشش ہوئی تو ناراض لوگوں نے سخت ردعمل دیا ۔ وہ تقریر کرنے کی کوشش کرتے رہے ہیں شرکاء نے ان کی بات نہیں سنی ۔ اور پھر ان سے مائیک چھین لیا گیا۔

لندن میں موجود ایک صحافی نے جو موقع پر موجود تھا ، بتایا کہ یہاں کے لوگ لوگ گزشتہ ایک ماہ سے سری نگر میں جاری بدترین کرفیو پر بیرسٹر سلطان محمود اور دیگر رہنماوں کی پراسرار خاموشی سے نالاں تھے

یہ بھی کہا گیا کہ لندن مظاہرے کی تین ہفتوں سے تیاری کی جا رہی ہے لیکن اس کے بارے میں بھی بیرسٹر سلطان محمود نے کوئی بات یا بیان نہیں دیا ۔

لوگوں کی آزادکشمیر کے رہنماوں سے مایوسی اس واقعے کا سبب بنی۔

بشکریہ : فرحان احمد خان